ملک تیمور مسعود اکبر اور حاجی عمر فاروق کی پنجاب اسمبلی کی سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر بنیادی معلومات نامکمل۔۔

تحریر : توقیر خان اتمانزئی

صوبائی اسمبلی پنجاب کی سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ممبران کی تفصیلات نا مکمل دیکھ بہت حیرانی ہوئی ۔ حلقہ پی پی سات اور پی پی آٹھ کے ممبران کی بنیادی انفارمیشن نامکمل دیکھ کر بہت سارے سوالات جنم لینا شروع ہوگئے ۔ پاکستان تحریک انصاف کے نوجوان ممبر صوبائی اسمبلی ملک تیمور مسعود اکبر جب صوبائی اسمبلی کے ممبر بنے تھے تو تب وہ غیر شادی شدہ تھے ۔ جس طرح سیاست میں انہوں نے ترقی کی اسی طرح ازدواجی زندگی میں بھی قدم رکھا لیکن تاحال صوبائی اسمبلی کی سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ازدواج کے خانے میں وہ غیر شادی شدہ ہیں ویسے تو ویب سائٹ پر زیادہ سے زیادہ معلومات کو فراہم کرنے کی کوشش کی گئی لیکن اپ گریڈیشن کہا تک ہوئی کچھ کہ نہیں سکتے ۔ ویب سائٹ چلانے والے لاکھوں روپے تنخواہوں کی مد میں وصول کر تے ہیں لیکن معلومات کی تصدیق اور اپ گریڈیشن سے قاصر ہیں ۔دوسری جانب ممبر صوبائی اسمبلی پنجاب حاجی عمر فاروق جو پاکستان مسلم لیگ ن کے تعلق رکھتے ہیں انکی تو معلومات نہ ہونے کے برابر ہیں جیسا کہ ان کے حلقے میں اُن کی عدم موجودگی ایک سوالیہ نشان ہے جب سے موصوف ایم پی اے بنے ہیں ان سے ملنا تو اس طرح ہے جس طرح وزیر اعلی میاں محمد شہباز شریف سے ملنا ہو۔ یا تو یہ معلومات معیا نہیں کی گئی تاکہ ان کو اپ گریڈ کیا جاسکے۔ یہ کوہتائی کس طرف سے ہے یہ دیکھنا ہوگا ۔ اس تناظر میں جیسا کہ معلومات کی موجودگی نہ ہونے گے برابر ہیں اسی طرح ممبران بھی میسر ہونے سے قاصر ہیں ایم پی اے ملک تیمور مسعود اکبر کی عوام کے لیے موجود رہنا ، سوشل میڈیا کے ذریعے اپنے حلقے کے عوام سے منسلک رہنا خوش آئند ہے ۔جیسا کہ وہ سماجی رابطے کی سائٹ پر معلومات مکمل میسر ہیں لیکن تاحال غیر شادی شدہ ہیں۔ حالانکہ وہ شادی شدہ ہیں جب اس سلسلے میں ان سے رابطہ کیا تو انہون نے مسکرا کر جواب دیا کہ معلومات تو فراہم کی گئی ہیں لیکن اپ گریڈ نہیں کی گئیں۔ دوسری جانب حاجی عمر فاروق صاحب جس طرح عوامی حلقے سے دور ہیں اسی طرح انکی سماجی رابطے کی ویب سائٹ جو پنجاب گورنمنٹ کی جانب سے چلائی جارہی اس پر بھی اپ کا اتا پتا موجود نہیں۔ حاجی صاحب ذاتی طور نفیس شخص ہیں لیکن رابطہ کے فقدان نے ان کی شخصیت کو بہت متائثر کیا ہے بہت دفعہ ان سے رابطہ کیا گیا لیکن کوئی جواب موصول نہیں ہوا دوسری جانب ملک تیمور مسعود اکبر کی موجودگی اور دستیابی مثبت ہے۔ ایک بنیادی مسئلے پر میں نے ان کو نشاندہی کروائی جس پر انہوں نے خود رابطہ کرکے اس مسئلے کو حل کرنے کی یقین دہانی کروائی ۔ مجھے ذاتی طور ہزار اں اختلاف ہونگے لیکن ان کی اس رد عمل کو خراج تحسین پیش کر تاہوں۔ میری خواہش ہے کہ حاجی عمر فاروق صاحب بھی رابطہ کے سلسلےکو ؓبحال رکھیں۔جس طرح ویب سائٹ پر ان کا اتا پتا نہیں اسی طرح وہ حلقے میں سے غائب رہتے ہیں۔ عوام کے ساتھ ساتھ لیگی کارکنان بھی حاجی عمر فاروق صاحب سے نالاں ہیں۔ اگر رابطے کے حوالے سے سروے کروایا جائے تو پاکستان تحریک انصاف کے ممبران بازی لے جائیں گے۔ شاہد پی ٹی آئی کا عوامی رابطہ بحال رکھنے کی وجہ سے عوام الناس میں مقبول ہیں دوسری جانب اربوں روپے کے پراجیکٹ دینے کے بعد بھی رابطہ بحال نہ رکھنےکی وجہ سے عوام لیگی رہنماوں سے نالاں ہیں۔ملک تیمور مسعود اکبر اور حاجی ملک عمر فاروق کے درمیان بنیادی فرق رابطے کا ہے اور اگر جس نے عوام سے رابطے بحال رکھے گے تو وہ آنے والے الیکشن میں ووٹ لے سکیں گے۔ قومی اسمبلی کی سیٹ پر تو شاہد لوگ ترقیاتی کاموں کو ترجیح دیں لیکن صوبائی سیٹ کے لیے لوگ میل جول کو مدنظر رکھیں گے۔ قومی اسمبلی کے لیے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے اپنا امیج بہتر کر لیا ہے لیکن صوبائی سطح پر ن لیگ پر پاکستان تحریک انصاف سبکت رکھتی ہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: