نوجوان نسل میں قومی ترانے کی اہمیت کو اجاگر کرنےکی ضرورت ہے۔ ڈاکٹرعزیز ہاشمی

واہ کینٹ (شاویز خان )قومی ترانہ فاونڈیشن اسلام آباد کے زیر اہتمام واہ کینٹ میں سیمینار۔سیمینا رمیں قومی ترانے کی اہمیت پر روشنی ڈالی گئی ۔فانڈیشن کے چیرمین خالق قومی ترانہ ابو الاثر حفیظ جھالندھری کے منہ بولے صاحبزادے ڈاکٹر عزیز احمد ہاشمی کا کہنا تھا کہ اس وقت قومی ترانے کی اہمیت کو ہماری نوجوان نسل کے سامنے اجاگر کرنے کی ضرورت ہے مجھے افسوس ہوتا ہے ہمارے نوجوانوں کو قومی ترانہ صحیح طریقے سے ادا کرنا بھی نہیں آتا۔قومی ترانہ ملک کی تکریم ہوتا لیکن افسوس کے ہمارے تعلیمی اداروں میں اس پر کوئی توجہ نہیں دی جاتی ۔ ان کا کہنا تھا کہ میں نے بہت دفعہ اپنے کھلاڑیوں اور وہ طالبعلم جو ملک کی نمائندگی کر رہے ہوتے ہیں ترانے کوصحیح طرح پیش نہیں کر سکتے۔اس بنیادی مسئلہ کو دیکھتے ہوئے ہم نے قومی ترانہ فاونڈیشن کی بنیا د 2013 میں رکھی جس کا مقصد ترانے کی اہمیت ،ترانے پیش و غم،معنی اور اس کی کیفیت کو اپنے نوجوان نسل کے سامنے پیش کرنا ہے ۔ہم اس پلیٹ فارم پر تمام تعلیمی اداروں کو یہ آفر دیتے ہیں کہ وہ ہمیں موقع دیں تاکہ ہم بنیادی رشتہ جو قومی ترانے کے ساتھ ہے کو نوجوانوں میں اجاگر کر سکیں اور نئی نسل کو ترانہ پیش کرنے کی تربیت دے سکیں قومی ترانہ فاونڈیشن کا مقصد نئی نسل کی اخلاقی تربیت اور تعمیر شخصیت ہے جنہوں نے مستقبل میں ملک و ملت کی باگ دوڑ سنبھالنی ہے۔یہ مقصد قومی ترانے کے خالق ابوالاثر حفیظ جالند ھری کی خواہش کے مطابق ترانے کے الفاظ (عزمِ عالیشان) کی نسبت سے مندرجہ ذیل نکات پر مشتعمل اسلامی جمعوریہ پاکستان میں سائیہ خدائے ذوالجلال کی عملی تفسیر یعنی اللہ تعالی کی حاکمیت اعلی کو نظام قران کے شکل میں نافذ کرنا ہے۔اس نصب العین کو عملی جامہ پہنانے کے لیے تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے ماہرین پر مشتعمل ایک مجلس شوری کا قیام عمل میں لایا گیا اس پلیٹ فارم پر یہ گزارش ہے کہ اسلامی جمعوریہ پاکستا ن کے رہنے والے ہر شہری سے بالعمو م اور طلباء اور اساتذہ سے گزارش ہے کہ وہ قومی ترانہ زبانی یاد کریں۔ اور اس کے معنی اور تشریح کو سمجھنے کی کوشش کریں۔ جہان قومی ترانہ پڑھا جائے اس کی تعظٰیم کے لیے ادب سے کھڑے ہوں اور اس کو پڑیں ۔ہم چاہتے ہیں کہ تمام مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والوں تک ہماری رسائی ہو جن تک یہ تربیت ہم پہنچا سکیں۔اس موقع سیمنار میں شریک مقررین جن میں ڈائریکٹر نیوز پاکستان ٹیلی ویژن سرور منیر راو،زاہد گل خٹک مشیر روح فورم ، پروفیسر قاضی ظہور صاحب سمیت شرکاہ کی بڑی تعداد موجود تھی مقررین نے بھی قومی ترانے کی اہمیت کو اجاگر کیااور ڈاکٹر عزید احمد ہاشمی کی کوشش کو سہراتے ہوئے ان کا ساتھ دینے کی درخواست بھی کی۔
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: