غلام سرور خان کی قیادت میں متحد ہیں اپنی قیادت کی رہنمائی میں عوام کی خدمت کریں گے ۔ نوسربازو کی سرکوبی کے لیے جد جہد جاری رکھیں گے ۔ نعیم خان.

واہ کینٹ ( توقیر خان سے ) وارڈ نمبر 9 کی صدارت میرے لیے فخر کا باعث ہے میں اپنی قیادت کا مشکو رہوں کہ انہوں نے مجھ پر اعتماد کا اظہار کیا۔ نعیم عسکری ۔ترقیاتی کاموں کے حوالے سے ہمارے کونسلر ملک احتشام نے جو کردار ادا کیا وہ قابل تحسین ہے ۔ میں بحیثیت صدر وار ڈ نمبر 9 کے ترقیاتی کاموں کو پایا تکمیل تک پہنچانے کے لیے ان کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرونگا۔ ہم یہ جانتے ہیں کہ مخالفت موجود ہے لیکن میں بحیثیت صدر پاکستان تحریک انصاف وار ڈ 9 اس مخالفت کو ختم کرنےمیں اپنا کردار ادا کرنے کی کوشش کرونگا۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے وارڈ 9 کے نومنتخب صدر نعیم خان عسکری نے کہا کہ ہماری قیادت نےہمیشہ اپنےورکرز پر اعتماد کیا اور یہ ہی ان کی ترقی کا راز ہے۔ وہ اپنی حقیقی قوت کو پہچانتے ہیں ۔ ہم بحیثت ورکر غلام سرور خان اور ملک تیمور مسعود اکبر کے سپائی ہیں انہوں یہ ذمیداری میرے کاندھوں پر ڈال کر مجھے عزت بخشی میں انشاہ اللہ ایمانداری کے ساتھ اس کو نبھاوں گا۔ اختلافات کو جوبیج بویا جارہا ہے وہ کو ہم کسی بھی صورت اگنے نہیں دین گے میری اولین ترجیح ہے کہ کارکنان کے درمیان رابطے کو بحال کرو اور غیر ضروری اختلافات کو ختم کروں۔اختلافات جمعوریت کا حسن ہے مثبت اختلاف کو ہم سر آنکھوں پر لیتے ہیں ۔ وارڈ نمبر 9  کے پلیٹ فارم پر جو ترقیاتی کام شروع کر رکھے ہیں ان کی تکمیل کےلیے ہر ممکن تعاون کریں گے۔ انہوں نے ترقیاتی کاموں کے لیے کسی بھی قسم کی کسر نہیں چھوڑ رکھی۔ صدر پاکستان تحریک انصاف وارڈ 9 نعیم عسکری کا کہنا تھا کہ میں عوامی بندہ ہوں مجھے اپنے علاقے کے مسائل سے آگائی ہے میں کونسلر کینٹ بورڈ ملک احتشام صاحب کے تعاون اورمقامی قیادت کی رہنمائی سے ہرمسئلے کو حل کرنے کی کوشش کرونگا۔ مخالفت کے حوالے سے ایک سوال کے جواب ان کا کہنا تھا کہ مخالفت جمعوری حسن ہے اور یہ حسن اس وقت پاکستان تحریک انصاف کی درمیان موجود ہے۔ دوسری پارٹیاں تو ورکرز کو منہ تک نہیں لگاتی ۔میں ایم این اے غلام سرور خان ، ایم پی اے  ملک تیمور مسعود اکبر اور کونسلر کینٹ بورڈ ملک احتشام کی قیادت میں تمام تر اختلافات کو ختم کرنے کی کوشش کرونگا ۔ رہی بات ڈلور کرنے کی تو ہماری کو شش ہے بنیادی ضروریات کو عوام کی دیلیز تک لے کر جائیں ۔ 17 سال سے رکے کاموں کو ہم کرانے کی کوشش کر رہے ۔ ہمارا واحد وارڈ ہے جس میں زیادہ تر علاقہ دہی ہے انشاہ اللہ تین سے چار ماہ میں کارکردگی نظر ائے گے۔ تنظیم سازی کے حوالےسے ایک سوال کہنا تھا کہ میں تنظیم سازی کے مرحلےسے مطمین ہوں۔ اس تنظیم سازی میں اہل لوگوں کو عہدوں پر لایا گیا ہے ۔ بعض عہدے داروں پر جو تحفظات ہیں کہ ان کو نوازہ نہیں گیا ایسی کوئی بات نہیں تمام تر فیصلے مشاور ت سے کیے گئے ہیں ۔ پارٹیوں میں اچھے برے لوگ ہوتے سب کو ساتھ لے کر چلنا پڑتا ہے۔ ہماری قیادت نے ہم پر نظر رکھی ہوئی ہے ۔ میں اورمیری ٹیم انشا اللہ عوام کےاعتماد پر پورا اتریں گے۔ جو ابہام موجود ہے ان کو چند دنوں میں ختم کر دیا جائے گا۔ رہی بات ووٹ بینک کی تو جو لوگ عہدوں پر  لائے گئے ہیں ان کے ذریعے ووٹ بینک میں اضافہ ہوگا ۔

تبصرہ

میڈیا کی رپورٹ کے مطابق اس وقت وارڈ نمبر 9 میں کارکنان اختلافات اور عدم تحفظ کا شکار ہیں پارٹی کے لیے کراس روٹ پر موجود عہدے ہمیشہ آبیاری کا کام کرتے ہیں ۔لیکن اس وقت وارڈ نمبر9 میں کارکنان بلخصوص یوتھ میں ایک غصہ پایا جاتاہے عہدوں کی تقسیم میں یوتھ کے ذمیداران کے مطابق ناانصافی کی گئی ذاتی اور مفاد پرست ٹولے کو نوازہ گیا۔ اور ایسے لوگوں کو عہدوں پر لایا گیا جن کا ماضی اور حال ایک سوالیہ نشان ہے۔ صدر صاحب نے نوسر بازوں کے خلاف جنگ کی بات کی لیکن صورتحال یہ ہے کہ ان ہی کے وارڈ نمبر 9 میں عہدوں کی تقسیم میں کردار اور معیار کا خیال نہیں رکھا گیا۔ نعیم عسکر ی ایک مثبت سوچ کے حامل شخص ہیں لیکن ان کے ساتھ لگائی جانے والی ٹیم کے کردار پر ماضی میں بہت سے سوال اٹھائے جاچکے ہیں جس سے پورا علاقہ واقف ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ نعیم خان بحیثیت صدر وارڈ 9 کس طرح ان مسائل کو حل کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں۔ مجموعی رائے یہ ہے کہ ذاتی نوازشات پر مقامی قیادت کو دوبارہ سے غور کرنا ہوگا۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: