یوتھ ونگ کی تشکیل مکمل ہوچکی ہے ۔ تعلیم یافتہ نوجوان میری فرنٹ لائن فورس ہوگی۔ عثمان گل

انٹرویو : توقیر ریاض اتمانزئی
یوتھ ونگ کی تشکیل اسر سرنو کر رہاہوں۔ اور میری خواہش ہے کہ یوتھ ونگ ایسے نوجوانوں پر منحصر ہو کہ کل ہمیں اس میں سے لیڈر میسر ہوں۔ میں اس نظریہ کےخلاف ہوں کہ جس میں یوتھ ونگ میں غنڈے بھرے جاتے ہیں۔میں ایک ایجو کیشنلسٹ ہوں اور تعلیم ہی میرا معیار ہے۔ نو منتخؓب صدر یوتھ ونگ حلقہ پی پی 8 عثمان گل کی میڈیا سے گفتگو۔ ان کا کہنا تھاکہ میں ایم این اے غلام سرور خان اور ایم پی اے ملک تیمور مسعود اکبر کا شکر گزارہوں کہ انہوں نے یہ ذمیداری میرے کندھوں پر ڈالی ہے۔ میں اور میری فیملی نظریاتی طور پر خان گروپ کا حصہ ہیں ۔جس کی گواہ میرے والد محترم کی چالیس سالہ رفاقت ہے۔ ہمارے لیے قابل فخر ہوگا کہ سرور خان صاحب ہمیں کوئی ذمیداری دیں ۔میرٹ کے حوالےسے ایک سوال کےجواب میں عثمان گل کا کہنا تھاکہ میرے والد محترم کی چالیس سالہ رفاقت کی وجہ سے ٖغلام سرور خان نے ہمیں یوتھ ونگ کی صدارت دی ہے اگر کوئی کہتا ہے کہ ہماری قربانیا ں نہیں تو ان کو یہ سمجھ لینا چاہیے کہ میرے والد کی ایک سیاسی تاریخ ہے جو غلام سرور خان سے منسلک ہے۔ تو یہ کہا ہی نہیں جا سکتا ہےکہ ہماری قربانی نہیں ہے۔ میرے والد نے کبھی بھی مراعات اور عہدے کی لالچ نہیں کی لیکن جو ذمیداری ان کے کاندھوں پر ڈالی گئی وہ انہوں نے پھرپور انداز سے نبھائی ۔ اس وقت غلام سرور خان صاحب کی بات میرے لیے حکم کا درجہ رکھتی ہے میرے بارے میں یہ بھی سوال اٹھا یا جاتا ہے کہ میں نے وارڈز کے الیکشن میں مخالفین کے ساتھ ساتھ تھا تو میرا یہ سوال ہے کہ اب میں کس کے ساتھ ہوں ۔ اُس وقت میرے کاندھوں پر کوئی ذمیداری نہیں تھی ۔آج بحیثیت صدر یوتھ ونگ مجھے کسی پلڑے میں دیکھیں تو بات کریں۔ میں ایک ایجوکیشنلسٹ ہو ں تعلق ،برادری، دوستی کسی سے بھی ہوسکتی ہے یہ پابندی تو نہیں کہ میں نظریات کی بنیاد پر تعلق استوار کروں۔ نظریات میرے عمران خان اور غلام سرور خان کے سنگ چلتے ہیں ۔ لیکن تعلق علاقےمیں ایک ایجوکیشنلسٹ کی حیثیت سے کسی سے بھی ہوسکتاہے۔ میری کوشش ہے کہ میں جلد از جلدتنظیم سازی کو مکمل کروں۔ اور یوتھ ونگ کی صورت غلام سرور خان کو ایک ایسی ٹیم دوں جو ہر لحاظ سے قابل قدر ہو۔ غنڈے اور بدمعاشوں پر مشتعمل یوتھ ونگ کا میں قائل نہیں۔ میں پڑے لکھے لڑکو ں کو اپنی فرنٹ لائن میں کھڑا کروںگا تاکہ پاکستان تحریک انصاف کے نظریئے کو کراس روٹ لیول تک لےکر جا سکوں ۔ اس وقت الحمدو للہ یوتھ کی جانب سے جو رسپانس مجھے ملا ہے وہ قابل تحسین ہے۔ اس وقت ہم اپوزیشن میں ہے لیکن ہمارے نظریے اور سوچ میں اتنی طاقت ہے کہ ہم نام نہاد پراجیکٹس پر نظریاتی طور پر بھاری ہیں قوم تبدیلی چاہیتی ہے کہ خدمات نہیں لینا چاہیتی وقت خدمات اور پراجیکٹس کے گورک دھندے سے آگے نکل چکا ہے اب پاکستان کو پچانا ہے۔۔ عثمان گل کا کہنا تھاکہ عمران خان کا نظریہ اصل میں نظریہ پاکستان ہے یہ وہ نظریہ ہے جو پاکستان کی ترقی میں اہم سنگ میل ثابت ہو گا۔ عثمان گل نے بتایا کہ وہ پی پی 8 کا مکمل دورہ کر چکے ہییں اور جلد ایک گرینڈ پروگرام میں اپنی ٹیم کا اعلان کریںگے ۔ ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھاکہ میں اس وقت بھی آفر کرتا ہوں کہ کوئی اپنے اپ کو مجھ سے بہتر سمجھتا ہے اور کام کر سکتا ہے تو میں ایک قدم پیچھے ہٹ سکتا ہوں اور ان کے شانہ بشانہ چلوںگا اگر نہیں تو میرے ساتھ آگے بڑھیں۔ عثمان گل معروف تعلیم دان باوا اکرم کے صاحبزداے ہونے کے ناطے ایک مضبوط ایجوکیشن سسٹم سے وابسطہ ہیں جس کی وجہ سے وہ تعلیمی ترجیحایت کو اپنی اولین ترجیح سمجھتے ہیں ان کا کہنا تھا کہ نوجوان تبدیلی چاہتے ہیں وہ چاہتے ہیں کہ ان کو تعلیم کے بہتر وسائل مہیا کئے جائے ۔ ان کو روزگا ر دئے جائیں گلی محلوں کی سیاست کا دور سوشل میڈیا کے ہوتے ہوئے اب ختم ہو چکا ہے۔ غلام سرور خان اور ملک تیمور مسعود اکبر ایک باوقار اور عوام دوست قیادت ہے ہمیں ہر وقت میسر ہیں میرے لیے یہ اعزاز ہے کہ انہوں نےمجھے اس قابل سمجھا ۔ عثمان گل نے آئندہ آنے والےالیکشن میں پاکستان تحریک انصاف کی جیت کو یقینی قرار دے دیا ان کا کہنا تھاکہ لوگ اس وقت نعروں اور کم وقتی سیاست سے تنگ آچکےہیں انہیں ایسی قیادت چاہیے جو ہر لمحہ ان کے غم اور خوشی میں ان کے ساتھ ہو۔جو بینک بیلنس کے بجائے عوام پر خرچ کرے۔ میں نوجوانوں کا جذبہ دیکھ حیران ہوں جلد یوتھ کنوینشن کرانے جارہےہیں جس میں پاکستان تحریک انصاف یوتھ پلیٹ فارم کا اگلا لائے عمل وضع کریں گے۔ میری کوشش ہے کہ اگر کوئی دوست ناراض ہیں انکی ناراضگی دور کی جائے پی پی 8 کا ہرورکر ہر نوجوان ہمارے لیے قابل قدرہے ۔ ہماری خوش قسمتی ہے کہ ہمارے ایم پی اے بھی نوجوان ہیں اور نوجوانوں میں مقبول بھی ہیں پی پی 8 کی سیٹ انشا اللہ ملک تیمور مسعود اکبر ہی جیتے گا۔اور این اے 53 میں غلام سرور خان کا مقابلہ کرنا مشکل ہی نہیں ناممکن ہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: