فلسفہ حسینت ہی یزیدیت کی موت ہے۔ ہمیں اپنی زندگی میں اصلاف اہل بیت اطہار کو شامل کرنا ہوگا۔.عمران حیدر نقوی۔

ٹیکسلا ( توقیر خان سے ) رہنما پاکستان مسلم لیگ ن سید شہزادہ عمران حیدر نقوی نے محرم الحرام کے مرکزی جلوس ، تقریبات ، محافل کے حوالے سے اعلی سیکورٹی اوراعلی سطحی انتظام کرنے پر ضلعی پولیس جس میں آر پی او راولپنڈی فخر وصال محمود راجہ ، سی پی او راولپنڈی اسرا ر عباسی اور بلخصوص ایس پی پوٹھوہارسید محمد علی ، اسسٹنٹ کمشنر ٹیکسلا وقاص اسلم مارتھ،سی او ٹیکسلا قمرذیشان وٹاون میونسل اہلکار ،ڈی ایس پی ٹیکسلا سرکل ساجد گوندل ،ایس ایچ او صاحبان ٹیکسلا، صدر،واہ کینٹ اور سٹی چوکی ٹیکسلا کو خراج تحسین پیش کیا۔ممبر صوبائی اسمبلی و رہنما مسلم لیگ ن حاجی ملک عمر فاروق اور سفیر خان کے بھی شکر گزار ہیں کہ جنہوں نے ماتمی جلوسوںمیں شرکت کی۔اور بلخصوص چئیرمین بلدیہ سید محمو د حسین شاہ ،وائس چیرمین بلدیہ ذیشان صدیق بٹ و معزز کونسلران و ممبران و تحصیل کمیٹی کا بھی شکر یہ ادا کیا۔ کہ جنہوں نے دن رات انتظامی امور کو بہتر بنانے کے لیے ہمہ وقت کوشاں رہے۔ اس موقع پر میںتحصیل امن کمیٹی و محرم الحرام کمیٹی جس میں صدر زاہد حسین و ممبران سید شبیر حسین شاہ ۔ سید نثار حسین شاہ (شہال) ،سید مظہر حسین شاہ،سید قاصد حسین شاہ۔ سید اسد نقوی ، سید تہذیب الحسن نقوی ۔سید عاصم شاہ (موہڑہ شا ہ ولی شاہ ) کا بھی شکر گزار ہوں۔ جنہوں نے امن امان قائم رکھنے میں اپنا کلیدی کردار ادا کیااس کے ساتھ ساتھ تمام معزز علمائے اکرام جنہوں نے فلفسہ حسینی پیش کیا نوحہ خوان پارٹیاں بلخصو ص سید نثار شاہ ایڈوکیت ، سید ناظم حسین شاہ ایڈوکیٹ وسفیر حسین شاہ ۔سیدمظہر حسین شاہ (مرحوم )۔سید امجد حسین شاہ (مرحوم)۔،سید فیاض حسین شاہ ۔سید علی حیدر شاہ ۔استاد سید تہذیب حسین شاہ، جنہوں نے غم حسین میں دل گرمائے اور ماتمی سنگتوں کا جنہوںنے کربلا کے شہدا کو پرسہ پیش کیا کا بھی میں دل کی اتہا گہرائی سے شکر گزا ر ہوںاس کے ساتھ ساتھ میڈ یا کےتمام بھائیوں و وکلا برادری جس میں صدر بار میر ناصر بلال، کرنل کاظم نقوی ۔وقاص علی ایڈوکیٹ، ذیشان ایڈوکیٹ اور ظہرالحسن ذیلدار کا دل کی اتہا گہرائی سے شکر یہ ادا کرتا ہو۔ اس موقع سید عمران حیدر نقوی کا کہنا تھا کہ فلسفہ حسینی ہماری زندگی کی میراث ہے ۔ حسینیت امن و سلامتی اور محب کا نام ہے ۔ سچ اور حق پر ڈٹ جانا حسینیت ہے ۔ اللہ کی واحدانیت ، سنت نبوی ﷺ کی بقا اور بلندی کے لیے ہر طرح کی قربانی کا نام ہے۔ آج 2017 میں فلسفہ حسینیت کو عام کرنے کی ضرورت ہے غم حسین کی تپش سے ایمان کو تازہ کرنے کی ضرورت ہے۔ حسین جنتیوں کے سردار ہیں اور جنتی وہ ہی ہے جو حسین کے فلسفے جو ان کے نانا جان محمد ﷺ نے پیش کیا پر عمل کرے۔ آج درد حسین کو محسوس کرنا بھی اللہ رب العزت کی نعمتوں میںایک نعمت ہے۔ اہل بیت اطہار کی قربانی دین اسلام کی سر بلندی کے لیے تھی اور یہ دین سربلند رہے گا اس لیے کہ اس کو بلند کرنے کے لیے حسین نے سر تسلیم غم سجدے میں قلم کروا دیا ۔ سید عمران حیدرنقوی نے کہا حضر ت امام حسین علیہ سلام کی زندگی و سفر کربلا و قربانی تک ایک مسلمان کو زندگی کے اصول بتالا تی ہے ہمیں آج کے یزید کے سامنے حسینی بن کر کھڑا ہونا ہوگا۔ یزیدت کا مقابلہ حسینت کے سواہ نہیں ہوسکتا ۔فلسفہ حسینت ہی یزیدیت کی موت ہے۔ ہمیں اپنی زندگی میں اصلاف اہل بیت اطہار کو شامل کرنا ہوگا۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

WordPress.com.

Up ↑

%d bloggers like this: